Home / پاکستان / پشاور / تھیلی سیمیا فری صوبہ بنانے کیلئے خصوصی مہم

تھیلی سیمیا فری صوبہ بنانے کیلئے خصوصی مہم

پشاور(نمائندہ خصوصی)خیبر پختونخوا کے سب سے بڑے فلاحی ادارے فرنٹیئر فائونڈیشن کے چیئرمین اور سینئر سٹیزن کونسل کے رکن صاحبزادہ محمد حلیم نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا کو تھیلی سیمیا فری صوبہ بنانے کے لئے پندرہ ٹیمیں تشکیل دے کر صوبے بھر میں خصوصی مہم کا آغاز کر دیا گیا ہے جبکہ تھیلی سیمیا و ہیموفیلیا کے شکار ہزاروں بچوں کی جانیں بچانے اور ان کے مفت علاج کے لئے پشاور میں دو ارب پچاس کروڑ روپے کی لاگت سے ایشیا کا سب سے بڑا تھیلی سیمیا ہسپتال و تھیلی سیمیا ریسرچ سنٹر بنانے کے لئے تیاریاں تیز کر دی گئی ہیں انہوں نے تھیلی سیمیا کی روک تھام کے سلسلے میں ہونے والے اجلاس کے بعد بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ فرنٹیئر فائونڈیشن کے تین مراکز پشاور کوہاٹ اور سوات میں تھیلی سیمیا کے شکار چار ہزار پانچ سو غریب بچوں کی جانیں بچانے کے لئے ان کا مفت علاج کیا جا رہا ہے جبکہ سرکاری و غیر سرکاری ہسپتالوں میں ہزاروں غریب مریضوں اور بلڈ کینسر کے مریضوں کی جانیں بچانے کے لئے انہیں مفت خون کی فراہمی کا سلسلہ جاری ہے غریب بچوں کے مفت علاج اور مفت خون کی فراہمی کی وجہ سے فرنٹیئر فائونڈیشن غریبوں کے لئے امید کی کرن بن چکی ہے۔ مخیر حضرات کو ہزاروں غریب بچوں کی جانیں بچانے کے لئے فرنٹیئر فائونڈیشن کی بڑھ چڑھ کر مالی مدد کرنی چاہئے

اباؤٹ اخبار نو

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے