Home / تازہ ترین / افغان صدر کی انتخابی مہم کے قریب دھماکا 48 افراد ہلاک

افغان صدر کی انتخابی مہم کے قریب دھماکا 48 افراد ہلاک

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)کابل میں افغان صدر اشرف غنی کے انتخابی جلسے کے قریب دھماکے میں 48 افراد ہلاک اور 30 زخمی ہو گئے،دھماکے میں افغان صدر اشرف غنی محفوظ رہے،دھماکے کی اطلاع ملتے امدادی ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں ،دھماکے میں ہلاک اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیاگیا۔ ہلاک ہونے والوں میں خواتین اور بچے شامل ہیں اور ان میں سے زیادہ تر متاثرین شہری لگ رہے ہیں، اموات میں اضافے کا امکان ہے۔

امریکی ٹی وی کے مطابق افغان صدر اشرف غنی افغانستان کے صوبے پروان میں انتخابی جلسے سے خطاب کررہے تھے کہ اچانک دھماکے ہو گیا،دھماکے میں 24 افراد ہلاک اور 30 زخمی ہو گئے، دھماکے میں افغان صدر محفوظ رہے،دھماکے کی اطلاع ملتے امدادی ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں ،دھماکے میں ہلاک اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیاگیا۔افغانستان کے صحت حکام کا کہنا تھا کہ پروان میں صدر اشرف غنی کی جانب سے منعقدہ انتخابی ریلی کے قریب دھماکا ہوا، جس میں یہ ہلاکتیں ہوئیں۔

صوبائی ہسپتال کے سربراہ ڈاکٹر عبدالقاسم سنگن کا کہنا تھا کہ ہلاک ہونے والوں میں خواتین اور بچے شامل ہیں اور ان میں سے زیادہ تر متاثرین شہری لگ رہے ہیں، اموات میں اضافے کا امکان ہے۔دریں اثناء وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے افغانستان کے صوبہ پروان میں افغان صدر اشرف غنی کی الیکشن ریلی پر ہونیوالے دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ ایک بیان میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغانستان کے صوبہ پروان میں افغان صدر اشرف غنی کی الیکشن ریلی پر ہونے والے دھماکے کی شدید مذمت کی جبکہ دھماکہ کے نتیجے میں ہونیوالے جانی نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ معصوم انسانوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا انتہائی قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان میں قیام امن پورے خطے میں امن و استحکام کے لئے ناگزیر ہے ۔وزیر خارجہ نے جاں بحق ہونے والوں کیلئے مغفرت جبکہ زخمیوں کے لئے جلد صحت یابی کی دعا کی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے