Home / پاکستان / سندھ حکومت اور آئی جی پولیس کے درمیان ٹھن گئی

سندھ حکومت اور آئی جی پولیس کے درمیان ٹھن گئی

کراچی( اسٹاف رپورٹر)سابق پولیس سربراہان کی طرح موجودہ آئی جی پولیس ڈاکٹر کلیم امام سے بھی سندھ حکومت کی ٹھن گئی ہے۔ذرائع کے مطابق آئی جی سندھ پولیس ڈاکٹر کلیم امام نے کابینہ ارکان اور حکومتی شخصیات کو لفٹ کرانا چھوڑ دی ہے۔ آئی جی سندھ پولیس ڈاکٹر کلیم امام کے رویے پر مشیر قانون بیرسٹر مرتضی وہاب نالاں ہیں اور انہوں نے اس سلسلے میں انہیں سرکاری طور پر خط بھی لکھا ہے۔اپنے خط میں مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ سندھ پولیس کےلیے اسلحہ خریداری اور سیپرا قوانین پر آئی جی پولیس کا نکتہ نظر معلوم کرنے کےلئے فون کیا لیکن آپ میری فون کال اٹینڈ کررہے اور نہ جواب دے رہے ہیں۔ کسی سرکاری افسر کا غیرذمہ دارانہ رویہ انتہائی افسوسناک ہے، آئینی ذمہ داریوں پر فائز فرد کےساتھ یہ رویہ ہے تو عوام کےساتھ آئی جی کا کیا سلوک ہوگا۔مرتضی وہاب نے اپنے خط میں سوال اٹھائے ہیں کہ آئی جی پولیس کےنوتعمیر شدہ دفتر پر کتنے اخراجات ہوئے، بتایا جائے کہ اس کی تعمیر کے لیے مروجہ قواعد کو پورا کیاگیا؟، آئی جی پولیس سوالات کےجواب دیں۔واضح رہے کہ اس قبل بھی صوبے کے کئی پولیس سربراہان اور پیپلز پارٹی حکومت کے درمیان اختلافات سامنے آچکے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے