Home / پاکستان / بلند عمارتیں بنانے پر توجہ مرکوز ہے، وزیراعظم

بلند عمارتیں بنانے پر توجہ مرکوز ہے، وزیراعظم

اسلام آباد (بیورو رپورٹ)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ ہم نے شہروں کو محدود کرنے کا فیصلہ کیا ہے، ہماری توجہ شہروں کے پھیلاؤ کی بجائے بلند عمارتیں بنانے پر مرکوز ہے،پہلی مرتبہ کسی حکومت نے بڑے پیمانے پر ماحولیاتی تحفظ کےلئے اقدام اٹھایا تھا،تمام مذاہب انسانیت کی فلاح و بہبود کا درس دیتے ہیں۔3 روز ساتویں ریجنل ایشیائی کانفرنس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں گھنے جنگلات، طویل صحرا، بلند ترین پہاڑی سلسلے ہیں، شہروں میں رہنے والے زیادہ تر پاکستانی پاکستان کی خوبصورتی کو نہیں دیکھ پاتے۔وزیراعظم یہاں 12 ایکولوجیکل زونز ہیں صحرا سے لے کر ہمالیہ تک پاکستان قدرتی وسائل اور خوبصورتی سے مالا مال ملک ہے،ہمیں مستقبل کی نسلوں کا احساس کرکے فیصلے کرنے ہوتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ میں ان خوش قسمت پاکستانیوں میں شامل ہوں جو پاکستان کے تمام علاقے گھوم چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے جلد ہی قدرتی ماحول کو پہنچنے والے نقصانات کا احساس ہوگیا تھا، میں نے آبادی میں اضافے کی وجہ سے ہونے والی تباہی کو دیکھا لیکن حکومتوں نے بھی اس سلسلے میں کوئی اقدام نہیں اٹھایا۔عمران خان نے کہا کہ جب میں پیدا ہوا اس وقت پاکستان کی آبادی 4 کروڑسے کم تھی اور آج پاکستان کی آبادی 22 کروڑ ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے شہروں کو محدود کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور ہماری توجہ شہروں کے پھیلاؤ کی بجائے بلند عمارتیں بنانے پر مرکوز ہے۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں فضائی اور آبی آلودگی پر قابو پانے کی طرف توجہ نہیں دی گئی۔دریں اثناءوزیر اعظم کی زیر صدارت اجلاس میں وفاقی دارالحکومت میں آن لائن آرڈر کے نظام کو پنجاب اور خیبرپختونخواہ کے بڑے شہروں میں رائج کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ صوبائی سیکرٹریز نے بتایاہے کہ حکومت کی جانب سے پاسکو ذخائر سے صوبوں کو گندم کی فراہمی سے گندم کی صورتحال تسلی بخش ہے ۔ وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے اجلاس ہوا۔ اجلاس میں ملک بھر میں اشیائے ضروریہ خصوصا ً آٹے، گھی، چینی و دیگر ضروری اشیا کی قیمتوں کی موجودہ صوتحال اور ان اشیاءکی قیمتوں کو قابو میں رکھنے کے لئے اقدامات کا جائزہ لیا گیا ۔ صوبائی چیف سیکرٹری  صاحبان کی جانب سے صوبوں میں آٹے کی دستیابی اور قیمتوں کے حوالے سے وزیرِ اعظم کو بریفنگ دی گئی ۔ وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ گندم، آٹے اور فائن میدے کی اسمگلنگ کی روک تھام کے لئے بارڈر مینجمنٹ کو مزید موثر بنایا جائے،اسمگلنگ میں ملوث عناصر اور انکی معاونت کرنے والے سرکاری اہلکاروں کے خلاف بھی سخت ایکشن لیا جائے گا۔ وزیرِ اعظم کو گھی کی قیمتوں کی موجودہ صورتحال اور خاص طور پر ایکسل لوڈ پر عمل درآمد کو موخر کرنے کے حکومتی فیصلے کے بعد گھی کی قیمتوں میں کمی کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے