Home / پاکستان / اسٹیٹ بینک آف پاکستان نکی مانیٹری پالیسی جاری ، ، شرح سود ایک فیصد کمی

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نکی مانیٹری پالیسی جاری ، ، شرح سود ایک فیصد کمی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے جمعہ کو آئندہ دو ماہ کیلئے مانیٹری پالیسی جاری کردی ، شرح سود ایک فیصد کم کرکے 8 فیصد مقرر کرنے کا اعلان کردیاگیا ہے جبکہ گزشتہ دو ماہ میں مجموعی طور پر شرح سود میں 5.25 فیصد کمی کی جاچکی ہے،مرکزی بینک کے مطابق خراب زرعی حالات کے سبب خوردنی اشیاءکی قیمت بڑھنے کاامکان ہے، اگلے مالی سال معیشت سست رہی تو مہنگائی مزید کم ہوسکتی ہے۔مرکزی بینک کی جانب سے جاری کردہ مانیٹری پالیسی بیان کے مطابق رواں برس مہنگائی کی شرح 11 سے 12 فیصد رہنے کی توقع ہے اور اگلے مالی سال مہنگائی کی شرح 7 سے 9 فیصد رہنے کا امکان ہے،جب کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی سے افراط زر کا دباو ¿ کم ہوا ہے ۔مرکزی بینک کے مطابق کورونا کے سبب اچھوتے چیلنجز کا سامنا ہے کیونکہ وبا کی نوعیت غیر معاشی ہے، شرح سود میں کمی معاشی سست روی ختم نہیں کرسکتی لیکن رقم کی قلت کا مسئلہ حل کرسکتی ہے۔

اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مارچ اوراپریل میں ٹیکس آمدن میں 15فیصدکی واضح کمی ہوئی، رواں مالی سال کی چوتھی سہہ ماہی میں خسارے میں بڑے اضافے کاخدشہ ہے،چیلنجزکے باوجودکرنٹ اکاو ¿نٹ خسارہ قابومیں رہنے کاامکان ہے۔اسٹیٹ بینک کے مطابق مجموعی کھپت اورسروسز سیکٹر قدرے طویل عرصے تک دباو ¿ میں رہیں گے۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق شرح سود کم کرکے لاک ڈاو ¿ن کی وجہ سے معاشی سست روی کو روکنا بھی ممکن نہیں ہوگا جب کہ شرح سود کم ہونے سے کرونا کی وباءپر کوئی اثر نہیں پڑے گا، کرونا کی وباء کے باعث پیدا ہونے والی معاشی صورتحال مانیٹری پالیسی کے لیے چیلنج ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے