Home / پاکستان / سنگین کرپشن انکوائری،ڈائریکٹر سیکنڈری اسکول حامد کریم کی نا اہلی ثابت ہوگئی

سنگین کرپشن انکوائری،ڈائریکٹر سیکنڈری اسکول حامد کریم کی نا اہلی ثابت ہوگئی

کراچی (اسٹاف رپورٹر) محکمہ اینٹی کریشن میں سنگین کرپشن انکوائری میرے پاس ٹیچرز کی ترقیوں وغیرہ کا ریکارڈ موجود نہیں۔ ٹیچرز کی ترقیوں کا ریکارڈ سیکریٹری تعلیم اور متعلقہ ڈی ای اوز کے پاس جمع ہے ڈائریکٹر سیکنڈری و ہائیرسیکنڈری اسکولز حامد کریم کا محکمہ اینٹی کریشن میں تحریری جواب ، ڈائریکٹر سیکنڈری و ہائیرسیکنڈری اسکولز کی جانب سے ڈائریکٹر اسکولز حامد کریم کے خلاف محکمہ اینٹی کرپشن میں غیر تسلی بخش تحریری جواب جمع کروا دیا گیا ، اینٹی کریشن نے ڈائریکٹر سیکنڈری اسکولز سے دوبارہ تسلی بخش جواب جمع کرانے اور الزامات کے تحت آنے والے افسران سے بھی آ ئندہ سماعت پر سروس بک ، پرسنل فائلیں ، اپائنٹمنٹ آڈر و دیگر متعلقہ کاغذات جمع کروانے کی ہدایات ،

ڈائریکٹر سیکنڈری و ہائیرسیکنڈری اسکولز کراچی حامد کریم نے محکمہ اینٹی کریشن کے تفتیشی افسر زاہد میرانی نے کرپشن کے الزامات کے متعلق جواب مانگا تھا جس کے جواب میں ڈائریکٹر سیکنڈری اسکولز حامد کریم نے غیر تسلی بخش جواب جمع کرواتے ہوئے 2017 سے آج تک جن ایچ ایس ٹیز /ایس ایل ٹیزکو ترقیاں دی گئیں ہیں ان کی سینیارٹی لسٹ ، سروس بک ، پرسنل فائلیں ، بورڈ ، کالج اور یونیورسٹی کے سرٹیفکیٹ ، تمام تفصیلات و دیگر کاغذات محکمہ اینٹی کریشن کے تفتیشی افسر کو دینے کی بجائے کہا ہے کہ اس کا ریکارڈ سیکریٹری اسکولز ایجوکیشن کے آفس اور متعلقہ ڈی ای او آفسز میں جمع ہے ،

ڈائریکٹر سیکنڈری اسکولز حامد کریم نے تحریری جواب میں لکھا ہے کے متعلقہ تمام ریکارڈ سیکریٹری آفس جمع ہے ، کرپشن کے متعلق ڈائریکٹر سیکنڈری اسکولز حامد کریم کی جانب سے ایس ایم سی فنڈز ، اور اس کا استعمال بجٹ اور اخراجات کی تفصیل بھی غیرتسلی بخش تفصیلات فراہم کی گئی ہیں ،جی اور گول مول جواب جمع کروا کر انکوائری سے اپنی جان چھڑانے کی کوشش کی گئی ہے ، ڈائریکٹر حامد کریم نے تحریری جواب جمع کرواتے ہوئے کہا ہے کے ایس ایم سی فنڈز ، فرنیچر وغیرہ کا تعلق مجھ سے نہیں ہے وہ فنانس ڈیپارٹمنٹ میں جمع ہے اس کی تفصیلات آپ فنانس ڈیپارٹمنٹ سے رابط کر کے منگوا لیں حامد کریم نے تفتیشی افسر کو تحریری جواب میں کہا ہے کے علی چانڈیو ، عبدالستار عباسی ، غلام شبیر سولنگی ، فاطمہ عزیز ، نبی بخش شر، سوبھو لغاری ، ممتاز لانگاہ ، میر احمد و دیگر کے سروس ، بک پرسنل فائلیں ، سی این آئی ڈیز ، تعلیمی سر ٹیفکیٹ و ریکارڈ متعلقہ ڈی ای اوز اور ٹی ای اوز کے پاس ہے ان سے منگوایا جائے اسکولوں کے کرایوں کے متعلق لگائے گئے الزامات کے متعلق تحریری جواب میں لکھا ہے کے 2017 سے عدالتی احکامات پر کرایہ دیا جارہا ہے ،

اس سے قبل محکمہ اینٹی کرپشن سندھ نے ڈائریکٹر ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری کراچی حامد کریم کے خلاف سنگین کرپشن کی تحقیقات شروع کرتے ہوئے اینٹی کرپشن نے ڈائریکٹر سیکنڈری اسکول ایجوکیشن سے 3 جون کو تمام ریکارڈ سمیت طلب کیا تھا ۔ اینٹی کرپشن کے تحقیقاتی افسر زاہد میرانی کی جانب سے ڈائریکٹر سیکنڈری تعلیم کراچی کو لکھے گئے لیٹر میں ایچ ایس ٹی اور ایس ایل ٹیز کی سینارٹی لسٹ۔ متعدد اساتذہ اور افسران کی سروسز بک۔ اسکولوں کی نجی عمارتوں کو کرایوں کی عدم ادائیگی کی تفصیلات طلب کی تھیں ۔ تفتیشی افسر نے ایس ایم سی فنڈز کی تفصیلات۔ 2017.18 کی بجٹ تفصیلات۔ اور جن اساتذہ کو غلط پروموشن دیئے گئے تھے ان کی تفصیلات بھی محکمہ اینٹی کرپشن نے طلب کی تھی ۔ اس کے علاوہ آفتاب شیخ۔ مشرف علی۔ نصیرالدین۔ نواب احمد۔ محمد مقصود معیز۔ رخسانہ شاد۔ سلیمان آگرو۔ رخسانہ زیدی۔ طاہر ظفر۔ رفیق بلیدی۔ شوکت۔ حنیفہ اور امبر سلطانہ و دیگر ملازمین و افسران کی ترقیوں کے متعلق ۔ پرسنل فائلز ، سروس بک ، تعلیمی سرٹیفیکیٹ وغیرہ اینٹی کرپشن نے طلب کی تھی ان میں غیر قانونی ترقیاں لینے والے ٹی ای او ، رفیق حسین بلیدی۔ ٹی ای او ذکریا حسین۔ منظور علی چانڈیو۔ عبدالستار عباسی۔ غلام شبیر سولنگی۔ شاہ جہاں۔ عرفان خالد۔ فاطمہ عزیز۔ محی الدین۔ حاجی انور۔ فرزانہ۔ نبی بخش۔ سوبھو لغاری۔ ممتاز لانگاہ۔ میر احمد و دیگر کے نام شامل ہیں۔ محکمہ اینٹی کرپشن نے لکھا تھا کہ ڈائریکٹر سیکنڈری تعلیم حامد کریم کے خلاف بدعنوانیوں کے نہایت ہی سنگین الزامات ہیں جس کی ابتدائی تحقیقات شروع کر دی ہے اور ڈائریکٹر حامد کریم سے تمام ریکارڈ طلب کیا گیا تھا جو کے گزشتہ دو پیشوں پر محکمہ اینٹی کرپشن میں پیش نہیں ہوئے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے