Home / تازہ ترین / کراچی میں لوڈ شیڈنگ، کے الیکٹرک کا اعتراف جرم

کراچی میں لوڈ شیڈنگ، کے الیکٹرک کا اعتراف جرم

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کے الیکٹرک کے چیف ایگزیکٹو ;200;فیسر(سی ای او)مونس علوی نے کراچی میں لوڈشیڈنگ کا اعتراف کرتے ہوئے کہاہے کہ اس میں شک نہیں لوڈشیڈنگ زیادہ ہور ہی ہے، لوڈشیڈنگ وہاں بھی ہو رہی ہے جہاں نہیں ہوتی تھی،کراچی میں بجلی کے ریٹ کو خود کم یا بڑھا نہیں سکتے، کراچی کا ٹیرف ملک سے ڈھائی روپے کم ہے، جہاں پہلے لوڈ شیڈنگ ہوتی تھی وہاں مسلسل بجلی کی فراہمی پربل زیادہ ;200;یا، مارچ میں میٹرریڈنگ کے بغیربل ;200;ئے تواس کوفوری واپس لے لیا جب کہ اپریل میں میٹرریڈنگ کے بعدبل بھیجے گئے ہیں ۔ بدھ کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مونس علوی

نے کہاکہ کراچی میں آج کل بہت زیادہ لوڈشیڈنگ ہورہی ہے ۔ کراچی میں لاک ڈاءون کے دوران لوڈشیڈنگ نہیں ہوئی ۔ لاک ڈاءون کے دوران بجلی کے طلب میں کمی تھی ۔ جہاں لوڈشیڈنگ نہیں ہوتی تھی، اب وہاں بھی ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں کے الیکٹرک کے پاس1800

فیڈرز ہیں ۔ جہاں کام ہورہا ہے وہ لوڈشیڈنگ میں شامل نہیں کیاجاتا ہے ۔ سی ای او کے الیکٹرک نے کہا کہ وفاق کےساتھ معاملات طے پاگئے ہیں ۔ کراچی میں 3560 میگاواٹ کی طلب ہے، ہم 3200 میگاواٹ بجلی بناسکتے ہیں ۔ مونس علوی نے کہا کہ امید ہے 10 سے 12 دن میں موسم بہترہوجائے گا ۔ موسم بہترہوتے ہی بجلی کی طلب میں کمی ہوجائے گی ۔

سی ای او کے الیکٹرک مونس علوی نے کہا کہ کراچی کے ہرعلاقے میں ساڑھے 7 سے 8 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہورہی ہے ۔ اووربلنگ پرصارفین کوغلط فہمی ہوئی ہے ۔ کراچی کاٹیرف ملک سے ڈھائی روپے کم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اعتراف کرتے ہیں کہ مستثنیٰ علاقوں میں بھی لوڈشیڈنگ ہورہی ہے،10سے 12دن میں درجہ حرارت کم ہوگا تو بجلی کی طلب میں بھی کمی ہوگی، آئندہ سال لوڈشیڈنگ سے متعلق صورتحال بہترہوجائےگی،3200میگاواٹ بجلی فراہم کرسکتے ہیں جبکہ طلب3500میگاواٹ ہے ۔

مونس علوی نے کہا کہ وفاقی محتسب کے99فیصدفیصلے کے الیکٹرک کے حق میں ہوتے ہیں ،صارفین وفاقی محتسب میں بھی شکایات درج کراسکتے ہیں ۔ انہوں نے شہریوں کو امید دلائی کہ حکومت سے مل کر کام کر رہے ہیں جلدصورتحال پرقابو پالیں گے، وفاق کے ساتھ اچھے روابط ہیں ،مسائل کاحل نکال رہے ہیں ۔ مونس علوی نے کہا کہ اس وقت کراچی میں زیادہ سے زیادہ ساڑھے سات اور 8 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ہورہی ہے کیونکہ کچھ پلاءٹس پر گیس پریشر کے مسائل ہیں ۔ اس وقت بجلی کی فراہمی میں شارٹ فال ہے اور 20 مارچ سے 28 مئی تک کراچی میں لوڈ شیڈنگ نہیں ہوئی ۔ میڈیا نمائندوں کی جانب سے شکایت پر مونس علوی نے کہا کہ ;39;اگر کے الیکڑک کے ترجمان میڈیا نمائندوں کے سوالات کے جواب نہیں دیتے تو یہ مناسب بات نہیں ہے ۔

انہوں نے اقرار کیا کہ لوڈشیڈنگ ان علاقوں میں بھی ہورہی ہے جو لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ ہیں ۔ پریس کانفرنس کے دوران بد نظمی بھی دیکھنے میں ;200;ئی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے