Home / پاکستان / کراچی،بدترین لوڈ شیڈنگ ،کے الیکٹرک کا لائسنس معطل ہونے کا امکان

کراچی،بدترین لوڈ شیڈنگ ،کے الیکٹرک کا لائسنس معطل ہونے کا امکان

اسلا آباد‘کراچی(بیورو رپورٹ: اسٹاف رپورٹر)نیپرا نے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ پر کے الیکٹرک کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے لائسنس معطل کرنیکاعندیہ بھی دے دیا۔ذرائعکے مطابق نیپرا نے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ پر کے الیکٹرک کو شوکاز نوٹس جاری کر دیا ہے، جس میں نیپرا نے کے الیکٹرک کا لائسنس معطل کرنے کاعندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ 15 روز میں شوکاز نوٹس کا جواب نہ ملا تو سمجھا جائے گا کہ کمپنی کے پاس کوئی جواب نہیں۔

نیپرا نے اپنی چارج شیٹ میں کہا ہے کہ کے الیکٹرک بن قاسم پاور پلانٹ کے لئے 1 لاکھ 20 ہزار ٹن فرنس آئل ذخیرے کا انتظام نہیں کیا، اور پلانٹ سے کم بجلی پیدا کی گئی، مشینوں کی مناسب دیکھ بھال نہ ہونے کے باعث پلانٹ کئی بار بند رہا، جب کہ 2017 کے دوران ٹیرف میں پلانٹ کی مرمت کے لئے 25 ارب کی منظوری دی گئی، کے الیکٹرک مناسب مینٹی ننس سے250 میگاواٹ تک اضافی بجلی بنا سکتا تھا، لیکن بروقت مرمت نہ ہونے سے کراچی والوں کو بدترین لوڈشیڈنگ کاسامنا کرنا پڑا۔

نیپرا نے کہا ہے کہ کے الیکٹرک دسمبر 2019 تک 900 میگاواٹ کا پاورپلانٹ مکمل کرنے میں ناکام رہی، کیالیکٹرک کو اس پاور پلانٹ کی 73 کروڑ ڈالر لاگت بھی صارفین کومنتقل کرنیکی اجازت دی، جون کے لئے 1 ماہ قبل تیل کی حتمی طلب یکم مئی کو بتانا ضروری تھا لیکن عمل نہیں ہوا اور کے الیکٹرک نے پی ایس او کو فرنس آئل کی بروقت ڈیمانڈ نہیں بھیجی، کے الیکٹرک نے سوئی سدرن کے ساتھ گیس فراہمی کا دیرپا معاہدہ نہ کیا، متعدد پاورپلانٹس کو متبادل فیول پر بھی نہیں چلایا گیا، کراچی میں 39 پاور ٹرانسفارمرز پر ذیادہ دبا ؤسے غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ ہوئی۔

دوسری جانب شہر میں بجلی کا بحران جاری ہے۔ بجلی کی طلب اور رسد میں پانچ سو میگاواٹ کا فرق آگیا۔ شہر میں بجلی کی طلب اکتیس سو میگا واٹ ہے جبکہ فراہمی چھبیس سو میگا واٹ ہے۔شہر قائد میں بجلی کا بحران جاری جبکہ طلب اور رسد میں 500 میگاواٹ کا بہت بڑا فرق آ گیا ہے۔ یہ فرق اس وقت ہے جبکہ شہر میں شام کے اوقات میں ہوٹل، دکانیں، شادی ہالز، مالز اور دیگر پر پابندی عائد ہے۔ اس وقت شہر میں بجلی کی طلب 3100 میگا واٹ ہے جبکہ کے الیکٹرک 2600 میگا واٹ بجلی فراہم کررہی ہے۔

لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ علاقوں میں 6گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے جبکہ لائن لاسز والے علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 10 گھنٹے ہے۔ نارتھ کراچی، اورنگی ٹاؤن، نیوکراچی، خدا کی بستی، ملیر اور نیو گولیمار میں رات گئے 4 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی گئی۔دریں اثناء ترجمان کے الیکٹرک نے کہا ہے شہر میں کہیں غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ نہیں کی جا رہی، مقامی فالٹ کو لوڈشیڈنگ سے تشبیہ دینا غلط ہے۔

کے الیکٹرک کے ترجمان کا کہنا تھا کہ صارفین کو فالٹ اور شٹ ڈاؤن کی پیشگی اطلاع دی جاتی ہے، لوڈشیڈنگ کا شیڈول روزانہ کی بنیاد پر ویب سائٹ پر اپ لوڈ کیا جاتا ہے۔ترجمان نے کہا کہ بجلی چوری والے علاقوں میں شیڈول کے مطابق لوڈشیڈنگ ہوتی ہے۔
کے الیکٹرک

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے